پولیس نے مارکھم کے علاقے میں حادثے کے بعد فرار ہونے والی گاڑی کی ویڈیو ریلیز کر دی
پیل ریجن میں جعلی نوٹوں کی گردش کا انکشاف، پولیس کا شہریوں کو ہوشیار رہنے کا انتباہ
دو بچوں کی ماں کانشے کی حالت میں گاڑی چلانے اورایکسیڈنٹ کرنے پر چالان ، اسکار بورو پولیس
November 20, 2017 قومی آواز ۔ ٹورنٹو: پولیس آفیسر کی نشے کی زیادتی سے ہلاکت کے بعد پولیس اہلکاروں کی چیکنگ کا معاملہ زور پکڑ گیا ٹورنٹو پولیس کے ایک اعلامیے کے مطابق ایک پولیس آفیسر کے نشے کی زیادتی کی وجہ سے ہلاکت کے بعد شہری حلقوں میں یہ مطالبہ زور پکڑ رہا ہے کہ پولیس کے اہلکاروں وقتاً فوقتاً چیکنگ کی جائے تاکہ ان کی صحت اور نشے کی کیفیت کی بر وقت جانچ کی جا سکے ۔ یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا جب ٹورنٹو پولیس کا ایک آفیسر مائیکل تھامسن نشے کی زیادتی کی وجہ سے اسپتال لایا گیا جہاں وہ ہلاک ہو گیا۔ مذکورہ پولیس آفیسر خود نشے کا تدارک کرنے والی فورس کا رکن تھا ۔اس واقعے کے بعد ٹورنٹو پولیس کی اہلیت اور کارکردگی پر سوال اٹھنے لگے ہیں۔ حکام کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں جلد ہی اقدامات متوقع ہیں جس سے صورتحال بہت ہو جائے گی۔ 
مسی ساگا میں خاتون پر چاقو سے حملہ ، خاتون حملہ آور کو پولیس نے گرفتار کر لیا
اسپیڈینا ریلوے اسٹیشن پر مسافروں پر مرچ اسپرے سے حملہ ، دو مسافر زخمی حملہ آور فرار
وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا استعفیٰ دینے سے انکار
کوئٹہ: پاک - چین اقتصادی راہداری کے حوالے سے مشترکہ ایئرشو
اسلام آباد دھرنا ختم نہ کرانے پر انتظامیہ کو توہین عدالت کا شوکاز نوٹس جاری
زمبابوین صدر کا قوم سے خطاب، استعفے کا ذکر تک نہ کیا

زیادہ ٹیکسٹنگ رشتوں کو کمزور کرتی ہے، ماہرین

قومی آواز لاہور (سو شل رائونڈ اپ) ماہرین نفسیات نے دعویٰ کیا ہے جس رشتے میں بالواسطہ ابلاغ شامل ہوجائے، اس رشتے کے کمزور پڑنے کے امکانات دیگر رشتوں سے بڑھ جاتے ہیں اور جو جوڑے ابلاغ کیلئے موبائل میسجنگ پر زیادہ انحصار کرتے ہیں، ان کا اپنے رشتے سے اطمینان کمزور پڑنے لگتا ہے۔ یہ دلچسپ تحقیق یونیورسٹی آف نارتھ کیرولینا میں ہوئی ہے۔ اس تحقیق کا اہتمام کرنے والے پروفیسر جوزف نووینسکی تھے۔ پروفیسر جوزف کا خیال تھا کہ آج کل کے دور میں جوڑے موبائل ٹیکسٹنگ کا زیادہ سہارا لیتے ہیں ایسے میں یقینی طور پر یہ ٹیکسٹنگ انکے تعلقات کو بہتر بناتی ہے۔ پروفیسر صاحب نے یہ مفروضہ بھی قائم کیا تھا کہ جیسے جیسے جوڑوں کے بیچ موبائل ٹیکسٹنگ کا رواج بڑھتا ہوگا، ویسے ویسے ان کے بیچ دیگر ذرائع سے ابلاغ بھی بڑھتا ہوگا تاہم جب تنائج سامنے آئے تو وہ خود بھی حیران رہ گئے۔ کل395طلبا و طالبات پر کئے گئے اس تحقیقی سروے میں دو سو بیس خواتین اور 175نوجوان شامل تھے۔یہ تمام کے تمام افراد کم از کم بھی ڈیڑھ برس سے کسی نہ کسی بندھن میں تھے۔ ان افراد سے ابلاغ کی صورتحال معلوم کی گئی تو پتہ چلا کہ جو افراد ٹیکسٹنگ پر انحصار کرتے ہیں ان کے بیچ لڑائیوں کی تعداد بھی دوسرے جوڑوں سے زیادہ تھی جبکہ ان کے اپنے تعلق سے مطمئن ہونے کی شرح بھی کم تھی۔ دوسری جانب وہ جوڑے جن کے بیچ ٹیکسٹنگ نہ ہونے کے برابر تھی، ان کے اندر اپنے تعلق سے اطمینان بھی زیادہ تھا جب کہ بعض ایسے بھی تھے جن کے بیچ نہ تو کبھی ٹیکسٹنگ ہوتی تھی اور نہ  ہی کبھی لڑائی کی نوبت آئی تھی۔

یہ خبریں آپ قومی آواز کینیڈا پر پڑھ رہے ھیں

ماہرین اس نئے تعلق کے حوالے سے تاحال کوئی حتمی رائے تو قائم نہیں کرسکے ہیں تاہم امکان ہے کہ اس کی وجہ ذریعہ ابلاغ ہے۔ بالواسطہ ابلاغ کے سبب وہ ایک دوسرے پر زیادہ یقین کرنے کے قابل نہیں ہوتے ہیں جبکہ فون یا براہ راست بات چیت کی صورت میں وہ ایک دوسرے تک اپنے جذبات کو زیادہ بہتر طور پر پہنچا پاتے ہیں، نیز ایک دوسرے کے جذبات کی سچائی کو بھی وہ زیادہ بہتر طور پر جان پاتے ہیں۔علاوہ ازیں ٹیکسٹنگ کی صورت میں مسلسل جڑے رہنے کے باوجود بھی دوری کا احساس برقرار رہتا ہے جبکہ فون پر آواز سننے یا براہ راست بات چیت کی صورت میں دوری کا یہ احساس ختم ہوجاتا ہے۔ یہی دوری کا احساس انہیں ایک دوسرے کے اس حد تک قریب آنے ہی نہیں دیتا ہے کہ جہاں پہنچ کے وہ ایک دوسرے کی رائے کا زیادہ احترام کرنے کے قابل ہوسکیں اور ان کے بیچ لڑائی جھگڑوں کی نوبت کم ہوسکے


متعلقہ خبریں