پولیس نے مارکھم کے علاقے میں حادثے کے بعد فرار ہونے والی گاڑی کی ویڈیو ریلیز کر دی
پیل ریجن میں جعلی نوٹوں کی گردش کا انکشاف، پولیس کا شہریوں کو ہوشیار رہنے کا انتباہ
دو بچوں کی ماں کانشے کی حالت میں گاڑی چلانے اورایکسیڈنٹ کرنے پر چالان ، اسکار بورو پولیس
November 20, 2017 قومی آواز ۔ ٹورنٹو: پولیس آفیسر کی نشے کی زیادتی سے ہلاکت کے بعد پولیس اہلکاروں کی چیکنگ کا معاملہ زور پکڑ گیا ٹورنٹو پولیس کے ایک اعلامیے کے مطابق ایک پولیس آفیسر کے نشے کی زیادتی کی وجہ سے ہلاکت کے بعد شہری حلقوں میں یہ مطالبہ زور پکڑ رہا ہے کہ پولیس کے اہلکاروں وقتاً فوقتاً چیکنگ کی جائے تاکہ ان کی صحت اور نشے کی کیفیت کی بر وقت جانچ کی جا سکے ۔ یہ معاملہ اس وقت سامنے آیا جب ٹورنٹو پولیس کا ایک آفیسر مائیکل تھامسن نشے کی زیادتی کی وجہ سے اسپتال لایا گیا جہاں وہ ہلاک ہو گیا۔ مذکورہ پولیس آفیسر خود نشے کا تدارک کرنے والی فورس کا رکن تھا ۔اس واقعے کے بعد ٹورنٹو پولیس کی اہلیت اور کارکردگی پر سوال اٹھنے لگے ہیں۔ حکام کا کہنا ہے کہ اس سلسلے میں جلد ہی اقدامات متوقع ہیں جس سے صورتحال بہت ہو جائے گی۔ 
مسی ساگا میں خاتون پر چاقو سے حملہ ، خاتون حملہ آور کو پولیس نے گرفتار کر لیا
اسپیڈینا ریلوے اسٹیشن پر مسافروں پر مرچ اسپرے سے حملہ ، دو مسافر زخمی حملہ آور فرار
وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا استعفیٰ دینے سے انکار
کوئٹہ: پاک - چین اقتصادی راہداری کے حوالے سے مشترکہ ایئرشو
اسلام آباد دھرنا ختم نہ کرانے پر انتظامیہ کو توہین عدالت کا شوکاز نوٹس جاری
زمبابوین صدر کا قوم سے خطاب، استعفے کا ذکر تک نہ کیا

لکھتا جا شرماتا جا ۔۔

قومی آواز

لکھتا جا شرماتا جا ۔۔
شکیل احمد
قومی حالاتِ حاضرہ
کبھی لسانیت تو کبھی فرقہ واریت کے نام پر تو کبھی توھین رسالت تو کبھی سیاسی مفادات کے نام پر جب جب میں اپنے وطن کی سڑکوں پر فساد جلاؤ گھراؤ خون ریزی دکھتا ہوں. تو تب تب سوچتا ہوں کہ کیا واقعی ہندوستان ہمارا دشمن ہے. تو پھر ان فساد برپا کرنے والوں میں کوئی ہندوستانی کیوں نہیں؟ یہ تو سب فسادی میرے ہی وطن کے بدحال شہری ہیں جو روز بسوں کے انتظار میں گھنٹوں کھڑے رہتے ہیں .اور آج اپنی ہی بسوں کو نظرِ آتش کررہے ہیں.یہ تو وہی لوگ ہیں. جو دو وقت کی روٹی کمانے کے لئے دربدر بھٹکتے رہتے ہیں.اور آج شہر بند کرکے اپنے معاشرتی مسائل بڑھا رہے ہیں.یہ تو وہی لوگ ہیں جو اپنی زندگیوں میں امن خوشحالی چاہتے ہیں پر آج اپنے ہی ملک کا امن خراب کر رہے ہیں. یہ تو وہی لوگ ہیں جو یومِ آزادی کو جھنڈے لہرا کر پاکستان زندہ باد کے نعرے لگاتے ہیں پر آج اپنی ہی مٹی کو پامال کر رہے ہیں.آخر کیوں؟ انکے ذہنوں میں یہ جہالت کا زہر کس نے بھر دیا ہے؟ انکا اصل دشمن کون ہے؟ ہندستان امریکہ یا پھر وہ مفاد پرست ٹولا جنہوں نے اپنے مفادات کے خاطر انکے ہاتھوں سے قلم چھین کر انکے ہاتھوں میں کلاشنکوف پکڑا دی ہے انکے ذہنوں سے علمی سوچ نکال کر تعصب تشدد تسلط کی سوچ بھر دی ہے. اور انکے فہم سے دوست دشمن کی پہچان ختم کردی ہے. پھر میں سوچتا ہوں کہ ایسی قوم کو بیرونی دشمن کی کیا ضرورت جو اپنی ہی دشمن آپ ہوں.انکا آٹم بم کس کام جو انکی جہالت بھوک بدحالی مفلسی سے انکا دفاع نا کرسکے .اور اگر یہ یونہی اپنے ہی خلاف محاز آرائی پر رہے تو انکی بربادی اور تباہی ہندستانی مزائلوں سے ہو نا ہو مگر اپنے معاشرتی مسائل سے یقینی ہے.